رَمَضان المُبارَک 


 رَمَضان المُبارَک قمری سال کا نواں مہینہ ہے جس میں مسلمانوں پر روزہ رکھنا واجب ہے۔ بعض آیات کے مطابق قرآن کریم اسی مہینے میں نازل ہوا ہے۔ شب قدر بھی اسی مہینے میں واقع ہے۔ شیعوں کے پہلے امام حضرت علی ؑ اسی مہینے کی اکیس تاریخ کو شہادت کے مقام پر فائز ہوئے۔

اس مہینے کی اہم ترین عبادت‌ میں روزه رکھنا، قرآن مجید کی تلاوت، شب شقدر کی راتوں میں شب بیداری کرنا، دعا و استغفار، مؤمنین کو افطاری دینا اور فقیروں اور حاجتمندں کی مدد کرنا شامل ہے۔

مسلمان اس مہینے کو عبادت کا مہینہ قرار دیتے ہوئے اس کے لئے نہایت احترام اور قدر و منزلت کے قائل ہیں۔ مؤمنین رجب اور شعبان کے مہینوں میں روزہ رکھنے اور دیگر عبادتوں کے ذریعے اس مہینے میں داخل ہونے کیلئے پیشگی تیاری کرتے ہیں تاکہ اس مہینے کی برکتوں سے زیادہ سے زیادہ بہرہ مند ہو سکیں۔

وجہ تسمیہ اور معنی

رَمَضان کا لفظ مادہ “رـ م ـ ض” کا مصدر ہے جس کے معنی شدید حرارت اور جلانے کے ہیں۔[1] بعض ماہرین لغت کا کہنا ہے کہ اس خاص مہینے کو رمضان کہنے کی وجہ اس مہینے کا گرمیوں کے موسم میں قرار پانا ہے اور اس کا روزہ رکھنے کے ساتھ کوئی ربط نہیں ہے کیونکہ روزہ ظہور اسلام کے بعد واجب ہوا ہے جبکہ اس مہینے کو ظہور اسلام سے پہلے بھی اسی نام سے یاد کیا جاتا تھا۔[2]

قرآن میں رمضان کا تذکرہ

رمضان کا لفظ ایک بار قرآن کریم میں آیا ہے جس سے مراد رمضان المبارک کا مہینہ ہے۔ یہ واحد مہینہ ہے جس کا نام قرآن میں صراحت اور احترام کے ساتھ لیا گیا ہے: شَهْرُ رَمَضَانَ الَّذِی أُنزِلَ فِیهِ الْقُرْآنُ هُدًی لِّلنَّاسِ وَبَینَاتٍ مِّنَ الْهُدَیٰ وَالْفُرْقَانِ ۚ فَمَن شَهِدَ مِنكُمُ الشَّهْرَ فَلْیصُمْهُ ۖ…ترجمہ» ماہ رمضان وہ مہینہ ہے جس میں قرآن نازل کیا گیا ہے جو لوگوں کے لئے ہدایت ہے اور اس میں ہدایت اور حق و باطل کے امتیاز کی واضح نشانیاں موجود ہیں لہٰذا جو شخص اس مہینہ میں حاضر رہے اس کا فرض ہے کہ روزہ رکھے۔[3]

احادیث میں رمضان کا تذکرہ

اس مہینے کی عظمت اور اس کے اعمال کے بارے میں معصومین ؑ سے کئی احادیث نقل ہوئی ہیں جن میں سے بعض درج ذیل ہیں:

  • رمضان خدا کے ناموں میں سے ایک ہے۔[4]
  • ایک ایسا مہینہ ہے کہ اگر اس کی صحیح شناخت ہوجائے تو لوگ پورا سال رمضان ہونے کی تمنا کرتے۔ [5]
  • مغفرتوں کا مہینہ ہے اگر کسی شخص کے گناہ اس مہینے میں معاف نہ ہوئے تو کسی دوسرے مہینے میں معاف ہونے کی امید نہیں ہے۔[6]
  • آسمانی کتابوں کے نازل ہونے کا مہینہ۔[7]
  • ماہ رمضان خدا کا مہینہ ہے۔[8]
  • خدا کی رحمت اور بخشش کا مہینہ۔[9]
  • گناہوں کے ختم ہونے کا مہینہ۔[10]
  • آسمان کے دروازوں کے کھلنے کا مہینہ۔[11]
  • ثواب میں کئی گنا اضافہ ہونے کا مہینہ۔ [12]
  • قرآن کی بہار۔ [13]
  • جہنم کے دروازوں کے بند ہونے کا مہنہ۔
  • بہشت کے دروازوں کے کھلنے کا مہینہ۔
  • شیاطین کا زنجیر میں جکڑے جانے کا مہینہ۔[14]

امام صادقؑ سے منقول ایک حدیث کی روشنی میں ماہ رمضان میں اچھے اخلاق (حسن خلق) کا مظاہرہ کرنا پل صراط پر ثابت قدمی کا باعث بنتا ہے۔[15]

پہلی اور آخری تاریخ کا تعیّن

ماہ رمضان نیز دوسرے قمری مہینوں کی طرح چاند نظر آنے (رؤیت ہلال) یا ماہ شعبان کے 30 دن پورے ہونے کے ساتھ آغاز اور شوال کا چاند نظر آنے یا ماہ رمضان کے 30 دن پورے ہونے پر اس کا اختتام ہوتا ہے۔ ماہ رمضان میں انجام پانے والے مستحب امور میں سے ایک اس کے آغاز میں چاند دیکھنا(استہلال) ہے۔

بعض احادیث ماه رمضان کو ہمیشہ 30 دن قرار دیتی ہیں اور اس بات کی طرف اشارہ کرتی ہے کہ کبھی بھی اسے کمتر واقع نہیں ہوتا ہے [16] اسی بنا پر قدیم فقہاء کا ایک گروہ اس بات کے قائل تھے کہ ماہ رمضان ہمیشہ 30 دن کا ہوتا ہے۔[17] اس کے مقابلے میں بعض روایات سے یہ واضح ہو جاتا ہے کہ ماہ رمضان بھی دوسرے قمری مہینوں کی طرح کبھی 30 اور کبہی 29 دن کا ہوتا ہے۔ [18] اکثر فقہاء اسی بات کے قائل ہیں۔ [19]

اعمال

تفصیلی مضمون: ماہ رمضان کے اعمال

ماه رمضان مسلمانوں کے لئے نہایت اہمیت کا حامل ہے کیونکہ اس میں اسلام کے فروعات میں سے ایک اہم فریضہ یا عبادت یعنی روزہ مسلمانوں پر واجب ہوتا ہے۔ احادیث میں اس مہینے کے حوالے سے مختلف عبادتوں کا تذکرہ ملتا ہے ان اعمال میں سے بعض کو اعمال مشترک یعنی ماہ رمضان کے تمام دنوں اور راتوں میں انجام دینے کی سفارش کی گئی ہے جبکہ بعض اعمال مخصوص ایام کے ساتھ مخصوص ہیں۔ جیسے شب قدر کے اعمال وغیرہ۔

اہم واقعات

تفصیلی مضمون: ماہ رمضان کے اہم واقعات
  • حضرت خدیجہؑ کی المناک رحلت (10 رمضان 10 بعثت)
  • ولادت امام حسن مجتبیؑ (15 رمضان سنہ 3 ہجری)
  • شب قدر اور نزول قرآن (19 رمضان یا 21 رمضان یا 23 رمضان 1 بعثت)
  • فتح مکہ (20 رمضان سنہ 8 ہجری)
  • شہادت امام علی ؑ (21 رمضان سنہ 40 ہجری)

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *